logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo logo
star Bookmark: Tag Tag Tag Tag Tag
Pakistan

جھوٹ کے پاؤں نہیں ہوتے

نے بھارتی آرمی چیف کے دعوے کو بے نقاب کرنے اور حقائق سے آگہی کیلئے غیرملکی سفرائ، ہائی کمشنرز کو آزاد کشمیر میں لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کا دورہ کرا کے جہاں بھارتی جھوٹ کا چہرہ بے نقاب کر دیا ہے وہاں ان کے دورے سے پاکستانی موقف خودبخود سچا ثابت ہوتا ہے کیونکہ حقائق کا سامنے آنا ہی ہمارے موقف کی تائید اور اسے ثابت کرتا ہے۔ دوسری بات یہ کہ دعوت کے باوجود پاکستان میں متعین بھارتی ناظم الامور گورو اہلووالیا ان سفرا کیساتھ ایل او سی پر نہیں گئے۔ دفترخارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل کا یہ کہنا درست ہے کہ بھارتی آرمی چیف کا دعوی محض دعوی ہی رہ گیا، بھارت کا کوئی سفارتکار ایل او سی کے دورے پر نہیں آیا اور نہ ہی بھارت نے مبینہ لانچنگ پیڈز کے کوآرڈی نیٹس فراہم کئے۔ ڈی جی (آئی ایس پی آر) میجر جنرل آصف غفور نے یہ تک پیشکش کی کہ اگر وہ دورہ نہیں کرنا چاہتے تو ہمارے دفتر خارجہ سے جگہ کی لوکیشن شیئر کر لیں۔ خیال رہے کہ بھارتی آرمی چیف بپن راوت نے آزاد کشمیر میں واقع وادی نیلم میں مبینہ دہشتگرد کیمپس تباہ کرنے کا دعوی کیا تھا جسے پاکستان نے مسترد کر دیا تھا۔ ہم سمجھتے ہیں کہ جھوٹ کے پاؤں نہیں ہوتے والا محاورہ حرف بحرف درست ثابت ہوا ہے۔ بھارت ہمیشہ سے گمراہ کن پراپیگنڈے کا سہارا لیتا ہی اسلئے ہے کہ ان کا ہر دعویٰ جھوٹ پر مبنی ہوتا ہے۔ 26فروری2019ء کے بالاکوٹ واقعے سے لیکر ایف سولہ طیارہ گرانے اور بالاکوٹ میں کوا مار کر مبینہ سرجیکل سٹرائیک کا دعویٰ تک سبھی مقامات کا غیرملکی سفراء اور نمائندوں کا دورہ کرایا گیا اور ان کی زبانی حقائق کی گواہی دی گئی۔ اس کے باوجود بھارت جھوٹ اور بے بنیاد الزامات سے باز نہیں آیا۔ ہم سمجھتے ہیں کہ بھارت کی آرمی چیف جیسی سطح پر ایل او سی کی خلاف ورزی کی وجوہات اور کارروائی کے حوالے سے جو دروغ گوئی کی گئی پاکستان کی طرف سے اس واقعے کو بے نقاب کرنے کی حکمت عملی کے بعد تو اب بھارتی میڈیا اور عوام کی آنکھیں کھل جانی چاہئیں کہ ان کی فوجی قیادت کے دعوؤں میں کس حد تک صداقت تھی۔ سمجھ سے بالاتر امر یہ ہے کہ بھارت باربار جھوٹی کہانیاں گھڑ کر اور جھوٹے واقعات کا سہارا لیکر خود اپنے عوام کو گمراہ کیوں کر رہا ہے اور اس کے مقاصد کیا ہیں۔ کسی ملک کی فوجی قیادت ہی ڈرامہ بازی شروع کرے، حکمران جھوٹ کا سہارا لینے لگیں، میڈیا بے بنیاد پراپیگنڈہ کرنے لگیں اور عوام کو دھوکہ دیا جائے اس سے بڑھ کر عوام کو گمراہ کرنے کی اور کیا کوشش ہوگی۔ بھارتی قیادت آخر کب تک اس طرح کے ناکام اور طشت ازبام ہونے والے ڈراموں کا سہارا لے گی۔ قیادت مقبوضہ کشمیر میں اپنی پالیسی پر نظرثانی کرے اور پڑوسیوں کیساتھ تعلقات سازگار کرے تو ان کو اس قسم کی ڈرامہ بازی کی ضرورت ہی نہ پڑے۔ بھارتی سرکار کی پاکستان اور مسلمانوں سے نفرت کی پالیسی کے باعث سکھ برادری سمیت بھارت کی اقلیتی برادری عدم تحفظ کا شکار ہورہی ہے جس کے اثرات دنیا بھر میں ظاہر ہو رہے ہیں۔ بھارتی قیادت کو اپنے عوام کو گمراہ کرنے کی بجائے ان کو اعتماد میں لینا چاہئے، سرحدوں پر خواہ مخواہ کی کشیدگی اور پراپیگنڈہ سے سوائے شرمندگی اور کچھ حاصل نہیں ہوگا۔ بھارتی طیارے کو گرانے اور بھارت کا اسلحہ ڈپو تباہ کرنے اور اس مرتبہ بھارتی فوجیوں کو سفید جھنڈا لہرانے پر مجبور ہونے کے تمام عوامل خود کردہ را علاج نیست کے زمرے میں آتے ہیں۔ کیا ہی اچھا ہو کہ بھارت خود بھی چین سے رہے، کشمیریوں کو ان کا حق دے اور ہمسایوں کو بھی سکھ چین سے رہنے دے۔ بھارتی قیادت کو اپنے سینوں میں بالاکوٹ کے واقعے سے لگنے والی آگ ٹھنڈی کرنے کیلئے مزید آگ لگانے اور مزید نقصان برداشت کرنے اور خجالت کا شکار ہونے سے اب باز آجانا چاہئے۔

Themes
ICO